اہم ملک کے پاسپورٹ کو دنیا کا سب سے طاقتور پاسپورٹ قرار دے دیا گیا یہ کونسا ملک ہے جان کر آپ حیران رہ جاہیں گے؟

متحدہ عرب امارات کا پاسپورٹ دنیا کا سب سے طاقتور پاسپورٹ قرار دے دیا گیا، اماراتی حکومت نے طے کردہ ہدف 3 برس قبل ہی اپنے 47 ویں قومی دن کے موقع پر حاصل کر لیا۔ تفصیلات کے مطابق دنیا کے طاقتور پاسپورٹس کی تازہ ترین فہرست جاری کردی گئی ہے۔ متحدہ عرب امارات کا پاسپورٹ دنیا کا سب سے طاقتور پاسپورٹ قرار دے دیا گیا ہے۔ متحدہ عرب امارات نے دنیا کےسب سے طاقتور پاسپورٹ والے ملک کا اعزاز جاپان سے چھینا ہے۔ رپورٹ کے مطابق اماراتی پاسپورٹ رکھنے والے افراد167 مالک اور شہروں میںویزہ فری یا پھر ائیرپورٹ پر ہی داخلے کی اجازت لے سکتے ہیں۔ اس سے قبل اکتوبر میں متحدہ عرب طاقتور ترین پاسپورٹ والے ممالک کی جاری کردہ فہرست میں 21 ویں نمبر پر تھا۔ تاہم اب متحدہ عرب امارات نے یکدم بڑی چھلانگ لگاتے ہوئے دنیا کے سب سے طاقتور پاسپورٹ والے ملک کا اعزاز حاصل کر لیا ہے۔متحدہ عرب امارات کو یہ خوشخبری اس کے 47 ویں قومی دن کے موقع پر سنائی گئی ہے۔ اس حوالے سے متحدہ عرب امارات کی حکومت نے باقاعدہ منصوبہ بندی کرتے ہوئے 2021 کا ہدف طے کیا تھا۔ اماراتی وزارت خارجہ کی جانب سے باقاعدہ مہم کا آغاز بھی کیا گیا تھا۔ تاہم اماراتی حکومت کی شاندار پالیسیوں کے باعث متحدہ عرب امارات یہ ہدف 3 سال قبل ہی حاصل کرنے میں کامیاب ہوگیا ہے۔متحدہ عرب امارات کی اس شاندار کامیابی کا سب سے زیادہ کریڈٹ مملکت کے حاکم و صدر شیخ خلیفہ بن زاید النہیان کو دیا جا رہا ہے۔ شیخ خلیفہ بن زاید النہیان کی شاندار پالیسیوں کے باعث ہی متحدہ عرب امارات یہ شاندار اعزاز حاصل کرنے میں کامیاب ہوا ہے۔ واضح رہے کہ ایک عالمی مالیاتی کمپنی آرٹن کیپیٹل اس آن لائندرجہ بندی کے پروگرام کی اسپانسر ہے اور اس کی سالانہ فہرست میں یہ بتایا جاتا ہے کہ قدر ومنزلت کے اعتبار سے کس ملک کا پاسپورٹ دوسروں پر بھاری ہے۔ اس پاسپورٹ کو طاقت ور سمجھا جاتا ہےجسے زیادہ سے زیادہ ملک ویزے کے بغیر داخلے کی اجازت دیتے ہیں۔ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے بھی اماراتی حکومت کو اس کے 47 ویں قومی دن کے موقع پر خصوصی مبارکباد کا پیغام بھیجا ہے۔ وزیراعظم کا کہنا ہے کہ 47سال میں آج امارات ترقی،خوشحالی اور گڈ گورننس کی مثال بن چکا ہے۔ یہ ترقی عرب امارات کی قیادت کی دوراندیشی اور ویژن کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ دونوں ملکوں کی قیادت کی سرپرستی میں دو طرفہ تعلقات کو مزیدتقویت ملی ہے۔ جبکہ پاکستان اور متحدہ عرب امارات کے تعلقات طویل المدت اسٹریٹجک اکنامک پارٹنرشپ میں تبدیل ہوچکے ہیں۔
مزید خبریں