تین عبادات آپکا مقدر بدل سکتی ہیں.

تین عبادات آپکا مقدر بدل سکتی ہیں. (1 ) کلمہ طیبہ کاورد (2 ) استغفراللہ کی کثرت (3) درودوسلام کی کثرت کسی کوضرورگفٹ کریں یادرہےکہ اگرکسی نےآپکے میسج کی وجہ سے ان تین عبادات کواپنا لیا تواسکا اجر آپ کو مرنے کے بعد بھی ملتا رہے گا.! " خصوصی "دعا" "آپ" کے لیۓ" مالك اے دوجہاں آپ پر اور آپکے گھرانے پر اپنی خاص رحمت وبرکت نازل فرماۓ اور تمام ناگہانی، آفات اور تمام بیماریوں سے، تمام نقصانات سے اور تمام رنج و فکر سے محفوظ رکھے آمین یارب العالمین ***************************************************** درودِ پاک بہت بڑا سہارا اور خزانہ ھے عمل نیت کا محتاج ہے. مومن کی نیت اس کے عمل سے بہتر ہے. درود پاک کثرت (3000)سے پڑهنےکی نیت کرنے والوں میں شامل ہوجا ئیں اس مبارک نیت میں شامل ہونےکی دعوت دیں اور آپ بهی شامل ہوجا ئیں. إِنَّ الـلَّـهَ وَمَـلَـائِـكَـتَـهُ يُـصَـلُّـونَ عَـلَـى الـنَّـبِـيِّ يَـا أَيُّـهَـا الَّـذِيـنَ آمَـنُـوا صَـلُّـوا عَـلَـيْـهِ وَسَـلِّـمُـوا تَـسْـلِـيـمًـا {Al-Ahzab:56 بے شک الله اور اس کےفرشتےدرود بهيجتےھيں آپ صلی اللہ علیه وآله وسلم پر۰ اے ایمان والوں! تم بھی آپ صلی الله علیه وآله وسلم پر درود و سلام بهيجو۰ أعوذ بالله من الشيطان الرجيم بِسْمِ اللهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ اللَّهُمَّ صَلِّ عَلٰی سَيِّدِنَا مُحَمَّدٍ وَّعَلٰٓی اٰلِہٖ وَسَلِّمُ ****************************************************---------------------------------------------------------------------------------- درود شریف عملِ الٰہی ہے۔ سُنت رب العرش عظیم ہے۔ اللّٰہ اور جناب نبی ء کریم صلى الله عليه و سلم کی رضا ہے۔افضل ترین عمل ہے ، عافیتِ دارین ہے ، نجات ہے ، دونوں جہاں کی بڑائی کا ضامن ہے ، رہبر و رہنما ہے ، معلم ہے ، واجبات و فرائض کی سب سے بڑی عادت ہے ، ردِ بَلا ہے ، عذاب قبر سے حفاظت ہے ، گناہوں کا کفارہ ہے ، قبولیتِ دُعا کی ضمانت ہے ، دین و دنیا کی تمام مہمات میں سریع التاثیر ہے۔ ہر عبادت اللّٰہ کے لئے ہوتی ہے لیکن درود شریف اللّٰہ کا عمل ہے، اپنے رب کی ہاں میں ہاں ملانے کا نام ہے۔ فرمانِ الٰہی ہے اگر ہم کسی پر اپنا عتاب و عذاب نازل کریں اور اس کا دل مسجد میں یا نماز میں لگا ہو یا پھر درود پڑ ھتا ہوگا تو ہمارا عتاب و عذاب بھی رحمتوں میں تبدیل ہوجاتا ہے۔ اگر آسمانوں سے آگ اور پتھر برسنے لگیں اور زمین فتنہ فساد کا لاوہ اُبلنے لگے تو دو ہی لوگ محفوظ رہینگے ،ایک وہ جس کا دل نماز یا مسجد میں لگا ہوگا ،دوسرا وہ جو درود پڑھتا ہوگا۔ https://www.facebook.com/pages/Darood-E-Faiz-E-Qalander-RA/1472927896334017 ****************************************************** ************************************************************************************ درود پاک واحد الاحد ذریعہ ہے، آنحضور ﷺ کی نگاہ کرم میں رہنے کا، اور جس دن اک اشارہ ہوگیا نہ، پھر سمجھو کے بیڑہ پار ہے۔ ********************************************************************* فرمانِ مُصطفٰی صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہٖ وسلم قیامت کے دن لوگوں میں سے میرے نزدیک زیادہ قریب وہ ہوگا جس نے دنیا میں مجھ پر زیادہ دُرُود پڑھا ہوگا ( ترمذی ، کنزالعمال ) ***************************************************************** فرمانِ مُصطفٰی صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہٖ وسلم جس نے مجھ پرایک مرتبہ درودِ پاک پڑھا اللہ ( عزوجل ) اُس کے لئے دس ۱۰ نیکیاں لِکھ دیتا ہے اور دس ۱۰ گناہ معاف فرمادیتا ہے اور اُس کےدس ۱۰ درجات بُلند فرماتا ہے اور یہ دس ۱۰ غلام آزاد کرنے کے برابر ہے ( الترغیب والترہیب ) **************************************************************** فرمانِ مُصطفٰی صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہٖ وسلم تم اپنی مجلِسوں کو مجھ پر دُرُودِ پاک پڑھ کر آراستہ کرو کیونکہ تمہارا دُرُودِ پاک پڑھنا قِیامت کے روز تمہارے لئے نُور ہوگا ( جَامِعِ صِغِیْر ) **************************************************************** فرمانِ مُصطفٰی صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہٖ وسلم بخیل ہے وہ شخص جس کے پاس میرا ذکر ہُوا اور اُس نے مجھ پر دُرُودشریف نہ پڑھا (مِشکوٰۃ ) *************************************************************** فرمانِ مُصطفٰی صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہٖ وسلم تمہارا مجھ پر دُرُودِ پاک پڑھنا تمہاری دعاؤں کا مُحافظ ہے اور تمہارے لئے پروردگار کی رضا کا باعث ہے اور تمہارے اعمال کی طہارت ہے ( سعادۃُ الدارین ) ****************************************************************************************************************************** درود وسلام وہ واحد عبادت ھے جو ھر حال ميں قبول ومنظور ھوتی ھے ********************************************************************************************************** درود پاک کے ایسے فضائل، جو آپ نےکبھی بھی ایک جگہ پر نہیں پڑھے ہوں گے۔ آپ یے مضمون پڑھیں گے اور آپ کا قلب پڑھنےکے بعد پرسکون ہوجائیگا اور طبعیت روحانیت سے معمور ہوجائیگی۔ ان شاءَ اللہ تعالیٰ۔ 1) حبیب خدا ﷺ پر درود پاک پڑھنے والے پر اللہ تعالیٰ درود بھیجتا ہے۔ ایک کے بدلے ایک نہیں بلکہ ایک کے بدلے کم از کم دس۔ 2) درود پاک پڑھنے والے کے لئے رب تعالیٰ کے فرشتے رحمت اوربخشش کی دعائیں کرتے ہیں۔ 3) جب تک بندہ درود پاک پڑھتا رہتا ہے، فرشتے اس کے لئے دعائیں کرتے رہتے ہیں۔ 4) درود پاک گناہوں کا کفارہ ہے۔ 5) درود پاک سے (نیک) عمل پاک ہوجاتے ہیں۔ 6) درود پاک خود اپنے پڑھنے والے کے لئے اللہ تعالیٰ استغفار کرتا ہے۔ 7) درود پاک پڑھنے سے درجے بلند ہوتے ہیں۔ 8) درود پاک پڑھنے والے کے لئے ایک قیراط ثواب لکھا جاتا ہے جو کہ احد پہاڑ جتنا ہے۔ 9) درود پاک پڑھنے والے کو پئمانے بھر بھر کے ثواب ملتا ہے۔ 10) جو درود پاک کو ہی وظیفہ بنالے، اس کے دنیا اور آخرت کے سارے کے سارے کام اللہ تعالیٰ خود اپنے ذمہ لے لیتا ہے۔ 11) درود پاک پڑھنے کا ثواب غلام آزاد کرنے سے افضل ہے۔ 12) درود پاک پڑھنے والا ہر قسم کے ہولوں (خوف) سے نجات پاتا ہے۔ 13) شفیع المذنبین ﷺ درود پاک پڑھنے والے کے ایمان کی گواہی دیں گے۔ 14) درود پاک پڑھنے والے کے لئے شفاعت واجب ہوجاتی ہے۔ 15) درود پاک پڑھنے والے کے لئے اللہ تعالیٰ کی رضا اور رحمت لکھ دی جاتی ہے۔ 16) اللہ تعالی ٰ کے غضب سے امان لکھ دیا جاتا ہے۔ 17) اس کی پیشانی پر لکھ دیا جاتا ہےیہ نفاق سے بری ہے۔ 18) لکھ دیا جاتا ہے کہ یہ دوزخ سے بری ہے۔ 19) درود پاک پڑھنے والے کو قیامت کے دن عرشِ اِلٰہی کے سائے کے نیچے جگہ دی جائيگی۔ 20) درود پاک پڑھنے والے کی نیکیوں کا پلڑا بھاری ہوگا۔ 21) درود پاک پڑھنے والے کے لئے جب وہ حوض کوثرپر جائیگا، خصوصی عنایت ہوگی۔ 22) درود پاک پڑھنے والا کل سخت پیاس کے دن امان میں ہوگا۔ 23) پل صراط پر سے نہایت آسانی سے اور تیزی سے گذر جائیگا۔ 24) پل صراط پر اس نور عطا ہوگا۔ 25) درود پاک پڑھنے والا موت سے پہلے اپنا مکان جنت میں دیکھ لیتا ہے۔ 26) درود پاک پڑھنے والے کو جنت میں کثرت سے بیویاں عطا ہونگیں۔ 27) درود پاک کی برکت سے مال بڑھتا ہے۔ 28) درود پاک پڑھنا عبادت ہے۔ 29) درود پاک پڑھنا اللہ تعالیٰ کے نزدیک سب عملوں سے پیارا ہے۔ 30) درود پاک (ذکر کی) مجلسوں کی زینت ہے۔ 31) درود پ تنگدستی دور کرتا ہے۔ 32) درود پاک پڑھنے والاقیامت کے دن بس لوگوں سے زیادہ آنحضور ﷺ کے زیادہ قریب ہوگا۔(اور جس نے جتنا زیادہ پڑھا ہوگا، اتنا زیادہ قریب ہوگا) 33) درود پاک، درود شریف پڑھنے والے کو او ر اسکی اولاد کو اور اس کی اولاد کی اولاد کو رنگ دیتا ہے۔ (خود بھی ولی بنتا ہے، اسکی اولاد بھی ولی بنتی ہے اور اسکی اولاد کی اولاد بھی ولی بنتی ہے۔صرف انہی سلسلوں کے خانوادوں میں ولایت باقی رہتی ہے، جو کثرت درود کرتے ہیں، کثرت سے مراد عام کے لئے 1،000 اور اس سے اوپر کے لئے 3،000 اور اس سے اوپر کے لئے 10،000 اور خلفا اور خانوادوں کے لئے 30،000 ہے) 34) درود پاک پڑھ کے جس کو بخشا جائے، اسے نفع دیتا ہے۔ 35) درود پ پاک پڑھنے والے کو اللہ تعالیٰ کا اور پھر اللہ تعالیٰ کے حبیب ﷺ کا قرب نصیب ہوتا ہے۔ 36) درود پاک پڑھنے سے دشمنوں پر فتح و نصرت حاصل ہوتی ہے۔ 37) درود پاک پڑھنے والے کا دل (قلب) زنگار (گناہوں کی سیاہی) سے پاک ہوجاتا ہے۔ 38) درود پاک پڑھنے والے سے لوگ محبت کرتے ہیں۔ 39) درود پاک پڑھنے والا لوگوں کی غیبت سے محفوظ رہتا ہے۔ 40) سب سے بڑی نعمت یہ کہ درود پاک پڑھنے والے کو آنحضور ﷺ کا دیدار نصیب ہوتا ہے،( جو منزل مقصود مؤمن ہے۔) 41) ایک بار درود پاک پڑھنے والے سے دس گناہ معاف ہوتے ہیں اور دس نیکیاں لکھی جاتی ہیں۔ دس درجے بلند ہوتے ہیں اور دس رحمتیں نازل ہوتی ہیں۔ 42) درود پاک پڑھنے والے کی دعا قبول ہوتی ہے۔ 43) درود پاک پڑھنے والے کا کندھا جنت کے دروازے پر آنحضور ﷺ کے کندھے مبارک کے ساتھ چھوجائیگا۔ 44) درود پاک پڑھنے والا قیامت کے دن سب سے پہلے آقائے دوجہاں ﷺ کے پاس پہنچ جائیگا۔ 45) درود پاک پڑھنے والے کے لئے ۔۔۔۔۔قیامت کے دن آنحضور ﷺ متولی (ذمہ دار) ہوجائینگے۔ 46) درود پاک پڑھنے سے دل پرنور ہوتا ہے۔ 47) درود پاک پڑھنے والے کو سکرات کی تکلیف نہیں ہوتی۔ 48) جس مجلس میں درود پاک پڑھا جائے، اس مجلس کو فرشتے رحمت سے گھیر لیتے ہیں۔ 49) درود پاک پڑھنے سے آنحضور ﷺ کی محبت بڑھتی ہے۔ 50) آنحضور ﷺ درود پاک پڑھنے والے سے محبت کرتے ہیں۔ 51) قیامت کے دن سید دوعالم نور مجسم ﷺ درود پاک پڑھنے والے سے مصافحہ کریں گے۔ 52) فرشتے درود پاک پڑھنے والے سے محبت کرتے ہیں۔ 53) فرشتے درود پاک پڑھنے والے کے درود شریف کو سونے کی قلموں سے چاندی کے ورق پر لکھتے ہیں۔ 54) درود پاک پڑھنے والے کا درود شریف فرشتے دربار رسالت ﷺ میں لے جا کریوں عرض کرتے ہیں، "یارسول اللہ! فلاں کےبیٹے فلاں نے آنحضور ﷺ کے دربار میں درود پاک کا تحفہ حاضر کیا ہے۔ 55) درود پاک پڑھنےوالے کا گناہ تین دن تک فرشتے نہیں لکھتے۔ تو کیا اب بھی وقت نہیں آیا کہ درود پاک پڑھ کر دنیا، قبر، حشر اور قیامت کی ساری خوشیاں حاصل کرلو۔ آج سے نیت کرتے ہیں کہ کم سے کم نیچے نیت دیا گیا درود پاک یا کوئی بھی درود پاک، اللہ تعالیٰ کی توفیق سے، ایک ہزار کم سے کم پڑھیں گے اور زیادہ کا کوئی شمار نہیں۔ *********************************************************************************************************** درود کے بارے میں آثار و اقوال 1۔ حضرت ابوبکر صدیق رضی اللہ تعالی عنہ نے فرمایا، "نبی اکرم ﷺ پر درود پاک پڑھنا، گناہوں کو یوں مٹادیتا ہے، جیسے کہ پانی آگ کو بجھادیتا ہے۔اور حضور ﷺ پر سلام بھیجنا اللہ تعالیٰ کی رضا کے لئےغلام آزاد کرنے سے افضل ہے اور رسول اکرم ﷺ سے محبت کرنا، اللہ تعالیٰ کی راہ میں تلوار چلانے اور جانیں قربان کرنے سے افضل ہے۔ 2۔ ام المؤ منین،حبیبہ حبیب رب العالمین، حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ کا قول ہے کہ ، "مجلسوں کی زینت نبی کریم ﷺ پر درود پاک پڑھنا ہے، لہذا مجالس کو درود پاک سے مزین کرو۔ 3۔ حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ تعالی عنہ کا ارشاد گرامی ہے، آپ نے فرمایا کہ، نبی اکرم ﷺ پر درود پاک پڑھنا، جنت کا راستہ ہے۔ 4۔ سیدنا عبداللہ بن مسعود رضی اللہ تعالی عنہ نے حضرت زید بن وہب سے فرمایا کہ جب جمعہ کا دن آئے تو رسول اللہ ﷺ پر ہزار مرتبہ درود پاک پڑھنا ترک نہ کرو۔ 5۔ حضرت حذیفہ رضی اللہ تعالی عنہ کا فرمان ہے کہ درود پاک پڑھنا، درود پاک پڑھنے والے کو، اور اس کی اولاد کو، اور اولاد کی اولاد کو رنگ دیتا ہے۔ 6۔ حضرت عمر بن عبدالعزیز نے فرمان جاری کیا کہ جمع کے دن علم کی اشاعت کرو اور نبی اکرم ﷺ پر درود پاک کی کثرت کرو۔ 7۔ حضرت وہب بن منبہ رضی اللہ تعالی عنہ نے فرمایا، نبی اکرم ﷺ پر درود پاک پڑھنا، اللہ تعالی کی عبادت ہے۔ 8۔ حضرت امام زین العابدین، جگر گوشہ، شہید کربلا کا ارشاد گرامی ہے کہ، حق جماعت کی علامت اللہ تعالیٰ کے حبیب ﷺ پر درود پاک کی کثرت کرنا ہے۔ 9۔ حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام کا فرمان عالی مقام ہے کہ، جب جمعرات کا دن آتا ہے تو عصر کے وقت اللہ تعالیٰ آسمان سے فرشتے زمین پر اتارتا ہے۔ ان کے پاس چاندی کے ورق اور سونے کے قلم ہوتے ہیں۔ جمعرات کی عصر سے لے کر جمعہ کے دن غروب آفتاب تک زمین پر رہتے ہیں اور وہ نبی اکرم، شفیع المذنبین، شفیع اعظم ﷺ پر درود پاک پڑھنے والوں کا درود پاک لکھتے ہیں۔ 10۔ حضرت امام شافعی نے ارشاد فرمایا کہ، میں اس چیز کو محبوب رکھتا ہوں کہ انسان ہر حال میں درود پاک کثرت سے پڑھے۔ 11۔ حضرت ابن نعمان نے فرمایا کہ، اہل علم کا اس پر اجماع ہے کہ رسول اکرم ﷺ پر درود پاک پڑھنا ، سب عملوں سے افضل ہے۔ اور اس میں انسان دنیا میں بھی اور آخرت میں بھی کامیابیاں حاصل کرلیتا ہے۔ 12۔ حضرت محبوب سبحانی، قطب ربانی،غوث اعظم کا ارشاد گرامی ہے کہ، اے مؤمنوں! تم مسجدوں اور اللہ تعالیٰ کے حبیب ﷺ پر درود پاک لازم کرلو۔ 13۔ حضرت عارف صاوی نے فرمایا کہ، درود پاک انسان کو بغیر مرشد کے اللہ تعالیٰ تک پہنچادیتا ہے، کیوں کہ باقی اذکارمیں شیطان دخل اندازی کرلیتا ہے،اس لئے مرشد کے بغیر چارہ نہیں، لیکن درود پاک میں مرشد سید دو عالم ﷺ ہیں، لہذا شیطان دخل اندازی نہیں کرسکتا۔ 14۔ حضرت شاہ عبدالرحیم والد ماجد شاہ ولی اللہ محدث دہلوی نے فرمایا کہ، بہا وجدنا ما وجدنا، جو کچھ بھی پایا ہے، سب کا سب درود پاک کی برکت سے پایا ہے۔ 15۔ حضرت توکل شاہ نے فرمایا کہ، بند ہ جب عبادت اور ذکر میں مشغول ہوتا ہے تو اس پر فتنے اور آزمائشیں بکثرت وارد ہوتیں ہیں اور درود شریف کا عمدہ خاصہ یہ ہے کہ اس کا ورد رکھنے والے پر کوئی فتنہ اور ابتلا نہیں آتا اور حفاظت الٰہی شامل ہوجاتی ہے۔ ہم نے دیکھا کہ بلیات (عذاب) جب اترتی ہیں تو گھروں کا رخ کرتی ہیں مگر جب درود پاک پڑھنے والے کے گھر پر آتی ہیں، تو وہ فرشتے جو درود پاک کے خادم ہیں،وہ اس گھر میں بلاؤں کو نہیں آنے دیتے، بلکہ انکو پڑوس کے گھروں سے بھی دور پھینک دیتے ہیں۔ 16۔ حضرت سید محمد اسماعیل شاہ نے فرمایا کہ، درود پاک ہی اسم اعظم ہے۔ 17۔ حضرت خضر اور حضرت الیاس علیہما السلام فرماتے ہیں کہ، ہم نے آنحضور ﷺکو فرماتے سنا کہ جو شخص مجھ پر درود پاک پڑھے، اللہ تعالیٰ اس کے دل کو یوں پاک کردیتا ہے، جیسے پانی کپڑے کو پاک کردیتا ہے۔ 18۔ حضرت امام شعرانی فرماتے ہیں کہ، ہمارا طریقہ یہ ہے کہ، ہم درود پاک کی اتنی کثرت کریں کہ ہم حالت بیداری میں سید دو عالم ﷺ کے حضور حاضر ہوں، جیسے کے صحابہ کرام حاضر ہوتے تھے۔ آگے فرماتے ہیں کہ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ اور اگر ہم کو یے حاضری نصیب نہ ہو تو ہم درود پاک کی کثرت کرنے والوں سے شمار نہ ہوں گے۔ Ashfaq Ahmed; ===================================================================================================== Kindly try to recite any Darood Pak as much as much can and also advice your friends and family members.also بِسْمِ ﷲِالرَّحْمَنِ ارَّحِيم إِنَّ اللَّهَ وَمَلائِكَتَهُ يُصَلُّونَ عَلَى النَّبِيِّ يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا صَلُّوا عَلَيْهِ وَسَلِّمُوا تَسْلِيمًا ****اللَّهُمَّ صَلِّ عَلَى مُحَمدٍ، وَعَلَى آلِ مُحَمَّدٍ، كَمَا صَلَّيْتَ عَلَى إِبْرَاهِيمَ وَعَلَى آلِ إِبْرَاهِيمَ، إِنَّكَ حَمِيدٌ مَجِيدٌ، اللَّهُمَّ بَارِكْ عَلَى مُحَمَّدٍ، وَعَلَى آلِ مُحَمَّدٍ، كَمَا بَارَكْتَ عَلَى إِبْرَاهِيمَ، وَعَلَى آلِ إِبْرَاهِيمَ، إِنَّكَ حَمِيدٌ مَجِيدٌ ****💚اللَّهُمَّ صَلِّ عَلٰی سَيِّدِنَا مُحَمَّدٍ وَّعَلٰٓی اٰلِہٖ وَسَلِّم. ****اللَّهُمَّ صَلِّ عَلَىَ سَيِّدِنَا مُحَمَّدٍ النَّبِيِّ الأُمِّيِّ وَعَلَىَ آلِهِ وَصَحْبِهِ وَسَلَّمَ تَسْلِيماً كَثِيراً ******جزی اللهُ عَنَا سَيِّدِنَا مُحَمَّدا مَا هُوَ أُهْلْه ******اَللّٰھُمَّ صَلِّ عَلٰی سَيِّدِنَامُحَمَّدِ نِ النَّبِیِّ الْاُمِّیِّ وَ عَلٰی آلِہٖ وَ صَحْبِہٖ وَ بَارِکْ وَ سَلِّمْ ==================================================================================================== — ' کائنات کا سب سے آّخری عمل درود شریف '' باری تعالیٰ نے قرآن مجید میں اِرشاد فرمایا: ﻛُﻞُّ ﻣَﻦْ ﻋَﻠَﻴْﻬَﺎ ﻓَﺎﻥٍ O ﻭَﻳَﺒْﻘَﻰ ﻭَﺟْﻪُ ﺭَﺑِّﻚَ ﺫُﻭ ﺍﻟْﺠَﻼ‌ﻝِ ﻭَﺍﻹ‌ِﻛْﺮَﺍﻡِ O '' جو کچھ بھی زمین پر ہے سب فنا ہو جانے والا ہے،اور صرف آپ کے پروردِگار کی ذات باقی رہ جائے گی جو نہایت بزرگی اور عظمت والی ہے۔ '' ( سورۃ الرحمٰن،7:55-26 ) دوسرے مقام پر اِرشاد فرمایا: ﻛُﻞُّ ﻧَﻔْﺲٍ ﺫَﺁﺋِﻘَﺔُ ﺍﻟْﻤَﻮْﺕِ۔ '' ہر جان موت کا ذائقہ چکھنے والی ہے۔ '' ( سورۃ آل عمران،3:185 ) جب ہر چیز کو نِیست و نابود اور فنا ہو جانا ہے تو فقط اللّہ ربُّ العزت کی ذات ہی باقی رہ جائے اور اس کی حمد کرنے والا بھی نہیں رہے گا۔تو اس وقت بھی درود پاک ایسا عمل ہے جو جاری و ساری ہو گا۔اِس لیے کہ اللّہ سبحان و تعالیٰ خود یہ عمل فرماتا ہے،جیسا کہ اِرشاد فرمایا گیا: ﺇِﻥَّ ﺍﻟﻠَّﻪَ ﻭَﻣَﻠَﺎﺋِﻜَﺘَﻪُ ﻳُﺼَﻠُّﻮﻥَ ﻋَﻠَﻰ ﺍﻟﻨَّﺒِﻲِّ۔ '' بے شک اللّہ تعالیٰ اور اس کے فرشتے نبی ( ﷺ ) پر رحمت بھیجتے ہیں ( اور بھیجتے رہیں گے )۔ '' ( سورۃ احزاب،33:56 ) ہر ذی رُوح کو فنا ہے۔اِس کائنات کی ہر مخلوق نے '' ﺫَﺁﺋِﻘَﺔُ ﺍﻟْﻤَﻮْﺕِ '' کے فرمانِ اِلٰہی کے مطابق ایک مرتبہ موت کا ذائقہ چکھنا ہے۔بقاء و دوام ایک ہی ذات '' حی و قیوم اللّہ جلالہ '' کو ہے۔چونکہ درود پاک اللّہ تبارک و تعالیٰ کا بھی عمل ہے اور جب باری تعالیٰ ابداً موجود ہے اور اس پر فنا نہیں ہے تو اس کا عمل بھی اس کے ساتھ قائم و دائم رہے گا۔اِس لیے قرآن حکیم میں '' ُ ﻳُﺼَﻠُّﻮﻥَ '' فعلِ مضارع میں اِستعمال کِیا گیا ہے جو کہ حال و مستقبل پر دلالت کرنے کی وجہ سے دائمی مفہوم رکھتا ہے۔حال کبھی ختم نہیں ہوتا۔ہر موجود لمحہ،حال ہے اور ہر آنے والا لمحہ،مسقبل ہے۔تو گویا اللّہ ربُّ العزت کا اپنے نبی ﷺ پر درود بھیجنا ہر لحظہ جاری ہے اور ابد الآباد تک جاری رہے گا۔اس میں آج تک نہ کبھی کوئی انقطاع آیا ہے اور نہ آ سکتا ہے۔اِس لیے یہی مسلّمہ حقیقت ہے کہ:
مزید خبریں